سٹی کورٹ کراچی کے مال خانےسےمبینہ طورپراسلحہ کرائے پر ملتا ہے۔

صبانور صبانور

سٹی کورٹ کراچی  کے مال خانےسےمبینہ طورپراسلحہ کرائے پر ملتا ہے۔

سٹی کورٹ کراچی  کے مال خانےسےمبینہ طورپراسلحہ کرائے پر ملتا ہے۔ ساتھی ملزم  آٹھ ہزار روپے  میں پستول فراہم کرتا تھا۔گرفتار ملزموں نے  تفتیش میں اہم  انکشافات کردیئے۔

ایس ایس پی ضلع وسطی  کے مطابق  پاپوش قبرستان کےقریب سےگرفتارملزمان میں شہریارعرف معصوم بنگالی اورسعید بنگالی نے تفتیش میں اہم انکشافات کئے ہیں۔ایک ملزم نے بتایا کہ خلیل نامی ساتھی مخصوص مدت کےلیےملزمان کواسلحہ فراہم کرتا  تھا۔ پستول کے بدلے سے آٹھ ہزار روپے دیتے تھے۔ پکڑےجانےکی صورت میں خلیل جعلی وکیل بن کرتھانےآجاتا  اور جوڑ توڑ کراتا تھا۔ملزم  نے دوران تفتیش سٹی کورٹ میں سرکاری افسران کی ریکی کا بھی اعتراف کیا ہے۔ ملزم نے بتایا کہ خلیل کے کہنے پر ضلع وسطی میں کے الیکٹرک کے افسر کی ریکی کی۔ ایس ایس پی ضلع وسطی  کے مطابق مفرورملزم خلیل سزائےموت  کی سزا سےبھی بری ہو چکاہے۔ وہ  کارلفٹنگ کی وارداتوں میں بھی ملوث ہے۔